اسلامی احکام سے حقارت کا انجام

Muhammad Bilal 8 months ago

اسلامی احکام سے حقارت کا انجام

مکہ مکرمہ میں ایک عالم کا انتقال ہو گیا۔ انہیں عام قبرستان میں دفن کر دیا گیا ۔ کچھ عرصہ بعد ایک اورشخص کا انتقال ہو گیا ۔چونکہ عرب کا دستور ہے کہ ایک قبر میں کئی کئی مردے دفن کر تے ہیں ۔ا س لیے اس شخص کو دفن کر نے کے لئے اس عالم کی قبر کھولی گئی تاکہ اس شخص کو بھی اسی قبر میں دفن کر دیا جائے لیکن قبر کھولتے ہی ایک عجیب منظر نظروں کے سامنے تھا ۔ قبر میں اس عالم کی میت کی بجائے ایک نہایت حسین لڑکی کی میت تھی اور وہ لڑکی کسی یورپین ملک کی معلوم ہوتی تھی ۔ سب لو گ بہت حیران ہوئے اور یہ بات تھوڑی ہی دیر میں سارے علاقے میں پھیل گئی کہ فلاں عالم کی قبر میں ان کی میت کی جگہ ایک حسین لڑکی کی لا ش ہے ۔

اتفاق سے وہاں یورپ کے کسی ملک سے آنے والا ایک مسلمان سیاح بھی موجود تھا اس نے جب اس لڑکی کی صورت دیکھی تو کہا کہ میں اس لڑکی کو جانتا ہوں یہ فرانس کی رہنے والی ہے اس کا سارا گھرانہ عیسائی ہے لیکن یہ خفیہ مسلمان ہوگئی تھی اور اس نے مجھ سے بھی اسلام کی کچھ کتابیں پڑھی تھیں پھر کچھ دن بعد یہ بیمار ہوکر فوت ہوگئی تو گھر والوں نے عیسائیوں کے قبرستان میں دفن کر دیا اور اب ا س کی میت یہاں پہنچی ہوئی ہے ۔ لوگوں نے کہا کہ اس کی میت یہاں منتقل ہونے کی وجہ تو سمجھ میں آگئی کہ یہ نیک اور مسلمان تھی لیکن پھر عالم صاحب کی میت کہا ں گئی ۔ کسی نے کہا ہو سکتا ہے ان کی میت اس لڑکی کی قبر میں چلی گئی ہو ۔

اس سیاح نے کہا کہ میں حج سے فارغ ہوکر چند دن میں واپس جارہاہوں میں ا س لڑکی کے ورثا سے مل کر اس کی قبر کشائی کر کے دیکھوں گا کہ یہ کیا معاملہ ہے ان لو گوں نے عالم کے ورثا سے ایک شخص اس کے ساتھ کر دیا ۔ جب وہ واپس گیا تو اس لڑکی کے والدین سے سارا قصہ بیان کیا ۔وہ بہت حیران ہوئے چنانچہ انہوں نے جب لڑکی کی قبر کشائی کی تو لڑکی کے تابوت میں اس عالم کی میت تھی ۔جو مکہ دفن ہوا تھا وہ لو گ بہت حیران ہوئے کہ یہ کیا ماجرا ہے ۔ مکہ میں جب یہ خبر پہنچی کے اس عالم کی میت عیسائیو ں کے قبرستان میں اس لڑکی کی قبر میں ہے تو سب کو بہت حیرانی ہوئی کہ لڑکی کا یہاں منتقل ہونا تو اس مسلمان ہونے اور نیک ہونے کی وجہ سے تھا ۔ لیکن عالم صاحب سے ایسا کو نسا گناہ ہو گیا جس کی وجہ سے انہیں عیسائیوں کے قبرستان میں منتقل کر دیا گیا ۔

چنانچہ اس کی بیوی سے پوچھا گیا کہ تیرے شوہر میں ایسی کونسی بات تھی جو اس کے ساتھ یہ معاملہ پیش آیا ،اس کی بیوی نے کہا کہ میرا شوہر بہت نیک اور نمازی تھا ،تہجد گزار اور قرآن کا پڑھنے والا تھا ۔ لو گوں نے کہا کہ سوچ کر بتاؤ کوئی تو ایسی بات ہو گی جس وجہ سے یہ معاملہ ہوا ۔ بیوی نے غور کر کے کہا کہ اس کی ایک بات مجھ پر ہمیشہ کھٹکتی تھی کہ جب بھی اس پر غسل جنابت واجب ہو تا تو وہ نہانے سے پہلے کہتا کہ عیسائیوں کے مذہب میں یہ بات بہت اچھی ہے کہ ان پر یہ غسل واجب نہیں ہے ہمیں سردی میں بھی نہانا پڑتا ہے ۔ پس اللہ نے اس کوان کے درمیان ہی پہنچا دیا جن کے طریقے کو وہ پسند کرتا تھا اور اسلام کے کسی حکم کو ٹھیک نہیں سمجھتا تھا ۔ (ذم النسیان صفحہ ۲ ،مواعظ اشرفیہ جلد ۴ صفحہ ۳۲۲) آج ہم لوگ کتنی باتیں کرجاتے ہیں جس میں اسلام کے کسی حکم کی حقارت ظاہر ہوتی ہے لیکن ہم پرواہ نہیں کرتے ۔

ہفت روزہ فیملی میگزین ۳۱۔مئی تا ۶۔جون ۲۰۱۵ عشق مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم کی بہاریں ، دو واقعات از فقیہ عصر حضرت علامہ مفتی محمد امین صاحب رحمۃ اللہ علیہ

عالمی تبلیغ الاسلام کا تعارف
Tabligh Ul Islam International is a non political islamic organization. Our Aim is to spread true spirit of islam every where in the world. All services on our website are free of cost and will remain free of cost ever.
خبریں اور اپ ڈیٹ
Weekly Mahfil e Durood Shareef

Published:Mar 19, 2018

فیس بک پر ہم سے رابطہ کریں
سبسکرائب کریں

خصوصی کتابیں حاصل کرنے کے لئے سبسکرائب کریں

Yo, you had better fill this out, it's required.
I'm required!
; ;